Punjabi Poetry Bulleh Shah, Munir Niazi Sad Love Poetry 2021

Assalm-o-Alaikum Friends, In This article I Will Show You best Punjabi Poetry OF Bulleh Shah and Shah Munir Niazi. Most Punjabi Poetry Of  Bulleh Shah Writting in Punjabi language. And theMunir Niazi Also writings in urdu. Bulleh Shah Real Name Is Abdullah Shsh. He Was a Punjabi Muslim Sufi Poet. Munir Niazi is one of the Poets who claims to be a great poet in two different languages. Munir Ahammad  Niazi was an urdu And Punjabi language Poet From Pakistan.(Puinjabi Poetry)

First i will Show Some Punjabi Poetry Of Bulleh Shah

Punjabi Poetry

 

میں ویکھاں، میرا یار نا وئکھے

جے میں نا ویکھاں تے او ویکھے

پر ایڈے بخت کتھوں لیاواں

میرے ویکھن دے وچ ویکھے

ماہی تیرے اند ر رہندا

تینوں اویں پین پلیکھے

یار فرید ! بوہے یار دے مریے

پانویں یا نا ویکھے

 

چڈرھدےسورج ڈھلدے ویکھے

بجھے دیوےبلدے ویکھے

ہیرے دا کوءیئ مل نہ ےتارے
کھوٹے سکے چلدے ویتھے

جیناں دا جگ تے کو ٰیی

اووی پتر پلدے ویکھے

اودی رہمت دے نال

بندے پانی اتے چلدے ویکھے

لوکی کہندے دال نہیں گلدی

میں تے پتھر گلدے ویکھے

بلھے نوں سمجھاون آئیاں، بھیناں تے بھرجائیاں
من لے بلھیا ساڈا کہنا، چھڈ دے پلّا رائیاں

آل نبی اولادِ علی نوں، توں کیوں لیکاں لائیاں

چیہڑا سانوں سیّد سدّے، دوزخ ملن سزائیاں
جو کوئی سانوں رائیں آکھے، بہشتیں پینگھاں پائیاں

رائیں سائیں سبھنیں تھائیں، رب دیاں بے پروائیاں
سوہنیاں پرے ہٹائیاں نیں تے، کوجھیاں لے گل لائیاں

جے توں لوڑیں باغ بہاراں، چاکر ہوجا رائیاں
بلھے شوہ دی ذات کہہ پچھنایں، شاکر ہو رضائیاں

 

بلھے نوں سمجھاون آئیاں، بھیناں تے بھرجائیاں
من لے بلھیا ساڈا کہنا، چھڈ دے پلّا رائیاں

آل نبی اولادِ علی نوں، توں کیوں لیکاں لائیاں

چیہڑا سانوں سیّد سدّے، دوزخ ملن سزائیاں
جو کوئی سانوں رائیں آکھے، بہشتیں پینگھاں پائیاں

رائیں سائیں سبھنیں تھائیں، رب دیاں بے پروائیاں
سوہنیاں پرے ہٹائیاں نیں تے، کوجھیاں لے گل لائیاں

جے توں لوڑیں باغ بہاراں، چاکر ہوجا رائیاں
بلھے شوہ دی ذات کہہ پچھنایں، شاکر ہو رضائیاں

 Then I Show Some Poetry OF Munir Niazi in Urdu

Poetry OF Munir Niazi

Munir Ahmed Niazi, was an Urdu and Punjabi language poet from Pakistan. He also wrote for newspapers, magazines and radio. In 1960, he established a publication institute, Al-Misal. He was later associated with Pakistan Television, Lahore and lived in Lahore till his death.(Puinjabi Poetry).Find latest collection of Munir Niazi Punjabi Poetry in urdu, Munir Niazi shayari is very famous in Pakistan and around the world

 

زندہ رہیں تو کیا ہے جو مر جائیں ہم تو کیا
دنیا سے خامشی سے گزر جائیں ہم تو کیا

ہستی ہی اپنی کیا ہے زمانے کے سامنے
اک خواب ہیں جہاں میں بکھر جائیں ہم تو کیا

اب کون منتظر ہے ہمارے لیے وہاں
شام آ گئی ہے لوٹ کے گھر جائیں ہم تو کیا

دل کی خلش تو ساتھ رہے گی تمام عمر
دریائے غم کے پار اتر جائیں ہم تو کیا

 

 

اتنے خاموش بهی رہا نہ کرو
غم جدائی میں یوں کیا نہ کرو

خواب ہوتے ہیں دیکهنے کےلیے
ان میں جا کر مگر رہا نہ کرو

کچه نہیں ہو گا گلہ کرنے سے

ان سے نکلیں حکاتیں شاید
حرف لکه کر مٹا دیا نہ کرو

اپنے رتبے کا کچه لحاظ منیر
یار سب کو بنا لیا نہ کرو

 

 

رنج فراق یار میں ، رسوا نہیں ہوا
اتنا میں چپ ھوا کہ تمشا نہیں ہوا

ایسا سفر ہے جس میں کوءی ہم سفر نہیں
رستہ اس طرح کا جو دیکھا نہیں ہوا

مشکل ہوا ہے رہنا ہمیں اس دیار میں
برسوں یھاں رہے ھیں ، یہ اپنا نہیں ہوا

وہ کام شاہ شہر سے ، یا شہر سے ہوا
جو کام بھی ہوا ہے وہ اچھا نہیں ہوا

ملنا تھا ایک بار اسے پھر کہیں منیر
ایسا میں چاہتا تھا ، پر ایسا نہیں ہوا

اتنے خاماش بھی رہا نہ کرو
غم جداٰی میں یوں کیا نہ کرو

خواب ہوتے ہیں دیکنھے کیلیےّ
آن میں جا کر مگر رہا نہ کرو

کچھ نہ ہوگا گلہ بھی کرنے سے
ظا لموں سے گلہ کیا نہ کرو

ان سے نکلیں حکا ءتیں شاید
حرف لکھ کر مٹا دیا نہ کرو

اپنے رتبے کا کچھ لحاٖظ منیر
یار سب کو بنا لیا نہ کرو

Leave a Comment